سیاست

سابق صوبائی وزیر بخت بیدار خان انتقال کرگئے

رحمت اللہ سواتی

پاکستان پیپلز پارٹی مالاکنڈ ڈویژن کے صدر اور دو بار سابق صوبائی وزیر بخت بیدار خان 70 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔ ان کے اچانک انتقال نے ان کے سیاسی موقف اور مقبولیت کی وجہ سے پورے علاقے کو سوگوار کر دیا۔
بخت بیدار خان کو چار روز قبل دل کا دورہ پڑا تھا اور انہیں اسلام آباد کے ہسپتال لے جایا گیا تھا۔ بعد ازاں انہیں پشاور کے نجی ہسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں انہوں نے آخری سانس لی۔
مرحوم طالب علمی سے ہی سیاست میں سرگرم تھے۔ وہ ایک بار 1979 اور پھر 1983 میں ضلع کونسل کے ممبر منتخب ہوئے، انہوں نے اپنے علاقے میں پیپلز پارٹی کی قیادت کی اور 1993 میں ایم پی اے منتخب ہوئے اور دو بار صوبائی وزیر رہے۔


جب قومی وطن پارٹی (QWP) کے سربراہ آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے پاکستان پیپلز پارٹی سے علیحدگی اختیار کی تو بخت بیدار خان بھی ان کے ساتھ ہو گئے اور اس کے جنرل سیکرٹری بن گئے۔

وہ 2013 کے عام انتخابات میں دوبارہ QWP کے ٹکٹ پر ایم پی اے منتخب ہوئے اور پی ٹی آئی کی زیر قیادت مخلوط حکومت میں صنعت، تجارت اور محنت کے صوبائی وزیر بنے۔ بعد ازاں انہیں پی ٹی آئی قیادت نے کرپشن کے الزامات پر برطرف کردیا تھا تاہم انہوں نے اس کیس کو عدالت میں چیلنج کیا اور پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان کے خلاف ہتک عزت کا دعویٰ دائر کردیا۔

انہوں نے مئی 2018 میں دوبارہ پی پی پی میں شمولیت اختیار کی لیکن پی ٹی آئی کے ہمایوں خان کے خلاف سیٹ ہار گئے۔ مرحوم نے 2008 میں نگراں وزیر آبپاشی کے طور پر بھی خدمات انجام دیں۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button