انڈونیشیا، پاکستانی میاں بیوی سمیت 13 افراد کو سزائے موت

انڈونیشیا میں پاکستانی، ایرانی جوڑے سمیت ایک درجن سے زائد افراد کو منشیات سمگلنگ کے الزام میں سزائے موت سنائی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق استغاثہ کے دفتر کے مطابق مجموعی طور پر 13 مشتبہ افراد کو فائرنگ کرنے والے سکواڈ کے ذریعے سزائے موت کا حکم دیا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ 3 ایرانی، ایک پاکستانی اور 9 انڈونیشی باشندوں کو سزا موت سنائی گئی, حکام کے مطابق گروہ 400 کلوگرام میتھامفیتیمین سمگل کرنے میں ملوث پایا گیا۔

کووڈ 19 کی وجہ سے فیصلہ مغربی جاوا کے سکابومی شہر میں ویڈیو لنک کے ذریعے دیا گیا تھا۔ حکام کے مطابق مشتبہ افراد کو جون کے اواخر میں گرفتار کیا گیا تھا۔

سکابومی پراسیکیوٹر کے دفتر کے سربراہ بامبنگ یونیانٹو نے بتایا کہ اسمگلنگ سازش کی سربراہی ایرانی حسین سالاری راشد نے کی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ حسین شالاری کے ساتھ دیگر 4 غیر ملکی بھی تھے۔پراسیکیوٹر کے مطابق حسین شالاری کو ان کی اہلیہ کے ساتھ سزا سنائی گئی ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بتایا کہ انڈونیشیا میں ایک وقت میں سزائے موت پانے والے منشیات اسمگلروں کی یہ تعداد سب سے زیادہ ہے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button