قبائلی اضلاع

گورنر خیبرپختونخوا سے فاٹا یوتھ جرگہ کی ملاقات، اصلاحاتی عمل میں تاخیر پر تشویش کا اظہار

سینئیر صحافی اور تجزیہ نگار سلیم صافی کی قیادت میں فاٹا یوتھ جرگہ کے وفد نے گورنر شاہ فرمان سے ملاقات کے دوران مطالبہ کیا کہ قبائلی اضلاع کے لئے مختص این ایف سی ایوارڈ کا 3 فیصد حصہ فوری طور پر دیا جائے اور خاصہ دار فورس کو بے روزگار نہ کیا جائے جس نے قبائلی علاقوں میں امن و امان کی بحالی کیلئے بڑی قربانیاں دی ہیں۔

سٹین جرنلسٹ اکبر علی سے

فاٹا یوتھ جرگہ کے ارکان نے گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان سے ملاقات کی اور فاٹا اصلاحاتی عمل میں تاخیر پر تشویش کا اظہار کیا۔

سینئیر صحافی اور تجزیہ نگار سلیم صافی کی قیادت میں فاٹا یوتھ جرگہ کے وفد نے گورنر شاہ فرمان سے ملاقات کے دوران مطالبہ کیا کہ قبائلی اضلاع کے لئے مختص این ایف سی ایوارڈ کا 3 فیصد حصہ فوری طور پر دیا جائے اور خاصہ دار فورس کو بے روزگار نہ کیا جائے جس نے قبائلی علاقوں میں امن و امان کی بحالی کیلئے بڑی قربانیاں دی ہیں۔

گورنر خیبرپختونخوا سے وفد نے یہ مطالبہ بھی کیا کہ قبائلی اضلاع کے سرکاری سکول و کالجز میں خالی آسامیاں پر کی جائیں جبکہ بھرتیوں میں مقامی لوگوں کو ہی اولین ترجیح دی جائے۔

وفد نے گورنر شاہ فرمان سے ترقیاتی کاموں کی مانیٹرنگ اور گزشتہ 10 سال کے تمام فنڈز کے آڈٹ کی استدعا کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ چیک پوسٹوں پر بھتہ اور غنڈہ ٹیکس کو ختم کیا جائے جبکہ افغانستان جانے کے لئے ویزے کی شرط سے قبائلی عوام کو مستثنی قرار دیا جائے۔

جواب میں گورنر شاہ فرمان نے کہا کہ انضمام کا فیصلہ ہوچکا ہے اب وہ قابل واپسی نہیں ہے بلکہ قبائلی اضلاع میں ترقی کا دور شروع ہونے والا ہے تعلیم ، صحت اور لیویز میں ہزاروں مقامی لوگوں کو نوکریاں دی جائیں گی۔

گورنر خیبر پختونخواہ نے وفد کو یقین دلایا کہ این یف سی ایوارڈ کے ملنے تک وہ وزیراعظم سے  قبائلی اضلاع کے لئے فنڈ ریلیز کرنے کی خصوصی درخواست کریں گے اور یہ کہ قبائلی اضلاع کا فنڈ صرف قبائلی عوام کی فلاح و بہبود پر خرچ ہوگا۔

گورنر نے وفد کو آگاہ کیا کہ اپریل میں قبائلی اضلاع میں صوبائی اسمبلی کے لئے جبکہ حلقہ بندیوں کی تکمیل کے فوراَ بعد بلدیاتی انتخابات کا انعقاد کیا جائے گا۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

Back to top button