قبائلی اضلاع

پختونخوا، فاٹا کےشدت پسندوں کی مالی اعانت روکھنے کے تحت ہنڈئ کاروبار کو بند کرنے فیصلہ

خیبر پختونخوا اور فاټا میں شدت پسندوں کی مالی معاونت کو روکھنے کے تحت ہنڈئ اور غیر قانونی طور پر کرنسی تبدیل کرنے والے روزگار پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔ گزشتہ روز گورنر خیبر پختونخوا سردار مہتاب احمد خان کی سربراہی میں صوبائی ایپکس کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں وزیر اعلیٰ پرویز خٹک، کور کمانڈر پشاور لیفٹننٹ جنرل ہدائت الرحمان اور آیی جی پولیس ناصر خان درانی، سمیت کئی اعلیٰ عہدیداروں نے شرکت کی۔گورنر ہاوس سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ اجلاس میں فاٹا اور خیبر پختونخوا کے امن و امان اور متاثرین کی واپسی کا جائزہ لیا گیا جس میں یہ فیصلہ ہوا کہ وفاقی حکومت سے پرامن علاقوں سے ایف سی اور فوج بلانے اور آہستہ آہستہ وہ چیک پوسٹیں پولیس کے حوالے کرنے کے لئے رابطہ کیا جائے۔ اجلاس میں شدت پسندوں اور دیگر جرائم میں ملوث افراد کی مالی معاونت کے موضوع پر بھی بات ہوئی اور اسکے روک تھام کے لئے ھنڈئ اور غیر قانونی طور پرکرنسی تبدیل کرنے کے روزگار کے خلاف سخت کاروائی کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button