قبائلی اضلاع

پولیٹیکل انتظامیہ اورکزئی کان حادثے کی زمہ دار ہے : شوکت یوسفزئی

خیبرپختونخوا رکن صوبائی اسمبلی شوکت یوسفزئی کا کہنا ہے کہ اورکزئی ایجنسی میں گزشتہ روز بارش کی وجہ سے گِرنے والا کوئلے کا کان غیرقانونی تھا جس میں نو افراد کی موت واقع ہوئی ہے۔

اورکزئی ایجنسی میں گزشتہ روز بارش کی وجہ سے کوئلے کی کان گرنے کے واقعے میں مرنے والے مزدوروں کا تعلق ضلع شانگلہ سے بتایا جاتا ہے جن کی لاشیں اپنے اپنے علاقوں کو روانہ کی گئی ہیں۔ ضلع شانگلہ سے منتخب ممبر صوبائی اسمبلی شوکت یوسفزئی نے الزام لگایا ہے کہ یہ کان غیرقانونی تھا جبکہ اس پر پہلے سے پابندی عائد ہونے کے بعد بھی پولیٹیکل انتظامیہ نے رشوت لیکر اسے دوبارہ کھولنے کی اجازت دے دی تھی ۔ شوکت یوسفزئی کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس کان کے منیجر نے مزدوروں کو کان میں آکسیجن کے لئے راستہ رکھنے کی اجازت بھی نہیں دے رہے تھے اور اس علاقے میں دیگر باثر افراد کوئلے کی غیرقانونی کانیں چلارہے ہیں جن پر پولیٹیکل انتظامیہ خاموش تماشائی بنی بیٹھی ہے۔ انہوں گورنز اقبال ظفر جھگڑا سے مطالبہ کیا ہے کہ اس واقعے کا فوری نوٹس لیتے ہوئے اس کی تحقیقات کرائے اور اس میں ملوث افراد کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے۔

خیال رہے کہ فاٹا اور ایف آرریجنز میں کوئلے کی کان میں کام کرنے والے زیادہ تر مزدوروں کا تعلق سوات یا شانگلہ سے ہوتا ہے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button