قبائلی اضلاع

غیر سرکاری اداروں کی تعلیمی ریشنلائزیشن پالیسی کی مخالفت

   بچوں کے حقوق اور تعلیم پہ کام کرنے والی غیرسرکاری تنظیموں نے فاٹا میں تعلیم ریشنلائزیشن کے نام سے تشکیل دی جانے والی پالیسی مسترد کی ہے۔

بدھ کو چائلڈ رائٹس مومنٹ، نیشنل کوارڈینیشن گروپ اور تعلیمی اصلاحی جرگے کا مشترکہ اجلاس ہوا جس میں فاٹا سیکرٹریٹ کی اس پالیسی کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔ اس موقع پر سماجی کارکنوں کا کہنا تھا کہ فاٹا میں پہلے سے تعلیمی شرح کم ہے کیونکہ پندرہ لاکھ بچے سکولوں سے باہر ہیں جبکہ مزید سکول بند ہونے سے شرح ناخواندگی میں اضافہ ہوگا اور بچے تعلیم کی سہولت سے محروم ہونگے۔ ایف آر بنوں کے احمدزئی اور اتمانزئی وزیر قبائل کے عمائدین نے سکولوں کی بندش کے کلاف گزشتہ روز بنوں ٹاؤن شپ میں گرینڈ جرگہ بلایا۔

سکولوں کی بندش پر ایف آر بنوں کا گرینڈ جرگہ

دوسری جانب ایف آر بنوں کے قبائلی عمائدین  کا کہنا ہے کہ احمدزئی اور اتمانزئی قبیلوں کے عمائدین اس وقت تک انتظامیہ کے ملاقاتوں سے بائیکاٹ جاری رکھینگے جب تک کہ فاٹا سیکرٹریٹ کی جانب سے کم تعداد ہونے کی وجہ سے سکولوں کی بندش کا فیصلہ واپس نہ لیا جائے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button