خیبر پختونخواقبائلی اضلاع

لوڈ شیڈنگ میں چارسدہ اور جمرود برابر، خلاف احتجاجی مظاہرہ

چارسدہ اور خیبر ایجنسی کے تحصیل جمرود میں بجلی کی غیر اعلانیہ اور طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہوئے۔

جمرود میں یہ احتجاج پاکستان تحریک انصاف کی یوتھ ونگ کے زیر انتظام کی گئی جس میں بھاری تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔ احتجاجیوں نے پارلیمانی لیڈران اور واپڈا کے خلاف نعرے لگائے۔ احتجاجیوں نے مظاہرے کے دوران باب خیبر تک ریلی بھی نکالی۔ ان مظاہرین کا کہنا تھا کہ جمرود میں مسلسل دو اور تین دن تک بجلی نہیں ہوتی جس کی وجہ سے معمولات زندگی متاثر ہورہے ہیں اور روزگار زندگی مفلوج ہوکر رہ گیا ہے۔ ان کے مطابق لوڈشیڈنگ سے طلبا کی پڑھائی بھی متاثر ہورہی ہے “اس کے بعد ہم خیبر میں اس وقت تک دھرنا دینگے جب تک ہماری بجلی ٹھیک نہیں کی جاتی۔ دنیا چاند پر پہنچ گئی ہے وہاں پر نوآبادیاتی نظام کا سوچ رہے ہیں اور ہم ہیں کہ ابھی تک بجلی کے لئے چیخیں مار رہے ہیں “

چارسدہ میں بھی تاجر اتحاد کی کال پر بھاری تعداد میں دوکانداروں نے ناروا لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاج کیا اور چارسدہ-مردان روڈ کو کچھ دیر کے لئے بلاک کیا۔ احتجاج کرنے والی تاجر برادری کا کہنا تھا کہ اٹھارہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ معمول بن چکی ہے جس سے ان کے کاروبار ٹپ پڑھ گئے ہیں۔ اس ہڑتال میں ضلعی ناظم سمیت کئی سیاسی رہنماؤن نے بھی شرکت کی۔ مظاہرین واپڈا کی اس یقین دہانی کے ساتھ منتشر ہوئے کہ دن میں آٹھ گھنٹے سے زیادہ لوڈشیڈنگ نہیں ہوگی۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button