قبائلی اضلاع

طورخم سرحد پر پانچ انٹری پوائنٹس قائم، افغان شہریوں کی پاکستان آمد پر رجسٹریشن کا عمل شروع

پاک افغان طورخم بارڈر پر افغان باشندوں کی باقاعدہ رجسٹریشن کے لئے پانچ انٹری پوائنٹس قائم کر دےئے گئے ہیں۔ کوئی بھی افغان باشندہ باقاعدہ  رجسٹر میں اپنی انٹری درج کئے بغیر پاکستان کی حدود میں داخل نہیں ہو سکے گا۔

انتظامیہ کے مطابق راہداری کا سلسلہ بھی جاری ہے اور سینکڑوں افراد ویزہ پاسپورٹ سے بھی پاکستان آتے ہیں۔   پاک افغان طورخم بارڈر پر افغان باشندوں  کی پاکستان آمد کے لئے باقاعدہ رجسٹریشن شروع کر دی گئی ہے اور اس مقصد کے لئے طورخم کی حدود میں پولیٹیکل انتظامیہ نے پانچ پوائنٹس قائم کر دیے ہیں جہاں باقاعدہ رجسٹر میں آنے والے افغان باشندوں کی تفصیلات درج کیجاتی ہیں جس میں ان کا نام ،ولدیت،علاقہ اورجہاں جس مقصد کے لئے جاتا ہے سب تفصیلات شامل ہیں۔

انتظامیہ کے مطابق روزانہ پندرہ ہزار کے قریب افغان شہری طورخم سرحد پر پاکستان میں داخل ہوتے ہیں۔ آنے والے ان افغان شہریوں میں سے سینکڑوں افغان قانونی دستاویزات پاسپورٹ اور ویزے کے ذریعے آتے ہیں جبکہ اسی طرح نادرا سے افغانیوں کی راہداری کا سلسلہ بھی زور و شور سے جاری ہے تاکہ کوئی افغان غیر قانونی طریقے سے پاکستان نہ آسکے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اب طورخم انتظامیہ نے پانچ پوائنٹس نادرا دفاتر کے تعاون سے  قائم کئے گئے ہیں جہاں ہر افغان شہری کو باقاعدہ طور پر رجسٹرڈ کیا جاتا ہے اور ان تمام افغانیوں کا باقاعدہ ریکارڈ رکھا جاتا ہے جو طورخم کے راستے پاکستان آتے ہیں۔  نائب تحصیلدار شمس الاسلام نے بتایا کہ بارڈر پر چیکنگ اور جامعہ تلاشی کا نظام بھی سخت کر دیا گیا ہے اور کنٹرول روم اور کیمرے بھی نصب کر دیے گئے ہیں تاکہ مشکوک افراد پر کھڑی نگاہ رکھی جا سکے ۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button