قومی

خواتین کو تحفظ دیکر خود مختار بنانے کےلئے اقدمات اٹھا رہے ہیں‘ عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے کہاکہ خیبر پختونخوا ویمن پروٹیکشن بل اسلامی نظریاتی کونسل بھجوادیا گیا ہے جہاں سے پاس ہونے کے بعد صوبائی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا۔ بل کے ذریعے صوبے کی خواتین کو تحفظ کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی ، خیبر پختونخوا حکومت خواتین کو اصل معنوں میں بااختیار اور خود مختار بنانے کےلئے اقدامات کررہی ہے ۔خواتین کو تعلیم کے زیور سے اراستہ کرکے ہی خود مختار بنانا ممکن ہے۔ یہی وجہ ہے صوبائی حکومت پر واضح کیا ہے کہ اگر 100سکول بنیں گے تو اس میں 70 فیصد لڑکیوں کےلئے ہونگی اسی طرح اگر صوبے میں ایک یونیورسٹی لڑکوں کےلئے بنے گی تو دو یونیورسٹیاں خواتین کےلئے بنیں گی۔ بےنظیر ویمن یونیورسٹی پشاور کے مین کیمپس لڑمہ اور بعد میں وزیراعلیٰ ہاوس پشاور میں خواتین کے عالمی دن کے حوالے سے منعقدہ تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہناتھاکہ اس وقت خیبر پختونخوا پولیس پورے ملک کے لئے مثال ہے اسی طرح تعلیمی اداروں ‘ ہسپتالوں اور دیگر اہم محکموں سے سیاست کا خاتمہ کرکے اسے ملک کےلئے مثال بنائےنگے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ خیبرپختونخوا میں طاقتور لوگوں کو قانون کے شکنجے میں نہیں لاسکیں لیکن جلد ہی ہر طاقتور کو قانون کے تابعد بنائےنگے تاکہ کمزور کو تحفظ فراہم کیا جاسکے۔ چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ قومیت اور مذہب کے نام پر سیاست کرنے والے قوم کے خیر خواہ نہیں، خواتین کے حقوق کےلئے خیبر پختونخوا کو مثالی صوبہ بنائیں گے ۔عمران خان کا کہناتھاکہ خواتین کے حقوق کے لئے قوانین کو بنائے جاتے ہیں لیکن ان پر عملدآمد نہیں ہوتا ،ہم قانون کی پاسداری برابری کی بنیاد پر چاہتے ہیں ، کوئی امیر غریب نہیں ۔صوبے میں نہ صرف خواتین کو تعلیم میں آگے آنے کے موقع دینگے بلکہ جائیداد میں حصہ دینے کے لئے بھی اقدامات اٹھائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ بلدیاتی انتخابات میں 44ہزار لوگ منتخب ہوئے ہیں جو بڑی تبدیلی ہے۔ مشرف دور میں ترقیاتی کاموں کےلئے 2ارب سے کم تھا اب 44ارب روپے سے زائد فنڈ ہے۔بےنظیر ویمن یونیورسٹی میں تقریب کے بعد چیئرمین تحریک انصاف نے طالبات کی جانب سے لگائے گئے مختلف سٹالوں کو دورہ کیا اور خواتین ہنرمندوں کی کاشوں کو سراہا۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button