قومی

مردم شماری شروع کرنے میں تاخیر کا فیصلہ

وفاقی حکومت نے رواں ماہ ہونے والی مردم شماری ایک بار پھرموخر کی ہے۔ اسلام آباد میں وزیراعظم نواز شریف کی صدرات میں مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ہوا جس میں چاروں صوبوں کے وزراءاعلیٰ ‘ وفاقی وزراءاور کونسل کے عہدیداروں نے شرکت کی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ مردم شماری فوج کی نگرانی میں کرانے کا فیصلہ ہوا ہے لیکن فوج اس وقت مختلف جگہوں پر آپریشن میں مصروف ہیں جس کی وجہ سے فوری طور پر مردم شماری ناممکن ہے۔
وزیراعظم ہاو¿س سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ مردم شماری کا اعلان وزراءاعلیٰ ‘ وفاقی وزراءاور پاک آرمی کے مشورے کے بعد کیا جائےگا۔
پاکستان میں آخری مردم شماری 1998ءہوئی تھی ‘ گزشتہ سال مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس میں فیصلہ ہوا تھا کہ مارچ 2016ءمیں مردم شماری شروع ہوگی۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button