قومی

باچا خان یونیورسٹی چارسدہ کے طلبہ کا وفاق سے شکوہ

پشاور(ٹی این این) باچاخان یونیورسٹی چارسدہ کے طلبہ پرمشتمل سٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی نے وفاقی حکومت سے شکوہ کیاہے کہ وفاق نے پختون طلباءکے قتل عام پر محض مذمت کے علاوہ کوئی توجہ نہیں دی وزیراعظم نوازشریف نے تاحال یونیورسٹی کا دورہ کرنابھی مناسب نہ سمجھاکیونکہ باچاخان یونیورسٹی میں پڑھنے والے طلباءکا تعلق پختون غریب خاندانوں سے ہیں اورشاید یہی وجہ ہے کہ وفاق کو باچاخان یونیورسٹی کے طلباءکے قتل عام کی کوئی فکر نہیں۔
پشاورپریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایکشن کمیٹی کے عہدیداروں حضرت علی یوسفزئی،احتشام خان، عدنان خان خیل اور دیگرکاکہناتھاکہ آرمی پبلک سکول پر جب حملہ ہوا تو ایک سال سے زائد گزرنے کے باوجود تمام سیاسی قائدین سمیت حکام بالا سکول کا دورہ کرتے رہے اور زخمی طلباءکے علاج کے ساتھ ساتھ انکی بحالی کے لئے خصوصی پیکجزکااعلان کیاگیا لیکن باچاخان یونیورسٹی پرحملے کے بعد محض مذمت پرہی اکتفاکیاگیا۔
انہوں نے مطالبہ کیاکہ باچاخان یونیورسٹی کو فوری طور پرکھول دیاجائے اورطلبہ کی سکیورٹی کا بندوبست کیاجائے جب کہ شہداء،زخمیوں اوردیگر طلباءکے لئے خصوصی پیکج کااعلان کیاجائے نیزیونیورسٹی کے لئے بھی خصوصی پیکج فراہم کیاجائے تاکہ باچاخان یونیورسٹی میں طلبہ داخلہ لینے کےلئے راغب ہوں انہوں نے دھمکی دی کہ اگرباچاخان یونیورسٹی کو جلد کھول کر اس کےلئے پیکج کا اعلان نہ کیاگیاتو صوبہ بھرکے طلباءتنظیموں کو ساتھ لیکر احتجاجی تحریک کاآغازکردینگے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button