خیبر پختونخوا

تعلیمی ایمرجنسی والی سرکار میں بغیر کمروں کا سکول

بخشالی(عظمت علی شاہ) تحریک انصاف حکومت کی تعلیمی ایمرجنسی کے وعدوں کو عملی جامہ نہیں پہنایا جاسکا اور صوبہ میں آج بھی تعلیمی داروں کا کوئی پرسان حال نہیں۔ خیبرپختونخوا کے صوبائی وزیرتعلیم عاطف خان کے علاقے چم ڈھیری میں قائم سرکاری پرائمری سکول کے بچے آج بھی کھلے آسمان تلے تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہیں ۔
28سال قبل قائم ہونے والے اس سکول میں ایک ہی کمرہ ہے جس سے گودام کے طور پر استعمال کیا جاتاہے جبکہ بچے اس شدید سردی میں کھلے آسمان تلے علم حاصل کررہے ہیں۔
طلباء نے بتایاکہ سکول میں ایک کمرہ ہے اور وہ بھی گودام کے طور پر استعمال ہورہا ، موسم کی شدت کے باوجود طلباء باہر پڑھنے پر مجبور ہیں۔ سکول میں بیٹھنے کیلئے ٹاٹ بھی موجود نہیں ، طلباء گھر سے چٹائی لاکر اس پر بیٹھتے ہیں۔
اس حوالے سے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر مردان سراج خا ن کا کہناتھاکہ صوبائی حکومت کی جانب سے پروگرام شروع کیا گیا ہے جس کے مطابق ہر سکول میں کم سے کم چار کمرے ہونگے ۔ اسی منصوبے کے تحت مذکورہ سکول پر بھی جلد کام شروع کیا جائیگا۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button