خیبر پختونخوا

مستقبل کے معماروں پر تشدد نے سفاک تبدیلی کا پردہ چاک کر دیا۔ آصف علی زرداری

سابق صدر اور پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے پشاوریونیورسٹی میں فیسوں میں اضافے کے خلاف احتجاج کرنے والے طلبہ پرتشدد کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایک کروڑ نوکریاں دینے کا دعویٰ کرنے والے پہلے سستی تعلیم تو دیں۔

سابق صدر اور پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے پشاوریونیورسٹی میں فیسوں میں اضافے کے خلاف احتجاج کرنے والے طلبہ پرتشدد کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مستقبل کے معماروں پر تشدد افسوسناک ہے جس نے سفاک تبدیلی کا پردہ چاک کردیا ہے۔

سابق صدر نے مزید کہا کہ ایک کروڑنوکریاں دینے کا دعویٰ کرنے والے پہلے سستی تعلیم تو دیں۔

دوسری جانب پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی طلبہ پر تشدد کی مذمت کی اور کہا کہ پرامن احتجاج طلبہ کا جمہوری حق ہے جبکہ حکمران ہوش کے ناخن لیں اور اپنی ناکامیوں کا بدلہ طلبہ سے نہ لیں۔

انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ گرفتار طلبہ کو فوری رہا کیا جائے اور فیس کم کی جائے جبکہ زخمی طلبہ کو بہترعلاج معالجے کی سہولت دیتے ہوئے طلبہ پروحشیانہ تشدد کرنے اور کرانے والوں کو سخت سزا دی جائے۔

خیال رہے کہ اس حوالے سے صوبائی حکومت کے ترجمان شوکت یوسفزئی کا کہنا تھا کہ طلبہ کا احتجاج فیسوں میں اضافے کا نہیں بلکہ ہاسٹلوں سے غیرمتعلقہ افراد کو نکالنے کا ردعمل ہے۔

میڈیا سے گفتگو کے دوران ان کا کہنا تھا کہ حکومت طلبہ کے مسائل پرمذاکرات کیلئے تیار ہے لیکن غیرمتعلقہ افراد کے ساتھ نہیں۔

واضح رہے کہ پشاور یونیورسٹی میں فیسوں میں اضافے کے خلاف برسراحتجاج طلبہ پر پولیس نے لاٹھی چارج کر دیا تھا جس سے کئی طلبہ زخمی ہوئے جبکہ متعدد طلبہ کو حراست میں بھی لے لیا گیا تھا۔

زیرحراست طلبہ کے حوالے سے شوکت یوسفزئی کا کہنا تھا کہ انہیں فوری طور رہا کرنے کی ہدایات جاری کر دی گئیں ہیں۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

Back to top button