خیبر پختونخوا

کرک : آئل ٹینکرز نے ٹیکسوں کی بھر مار پر تیل کی سپلائی بند کردی

کرک میں خال تیل لے جانے والے آئل ٹینکرز نے ٹیکسوں میں زیادتی کے خلاف احتجاجی طور پر خام تیل کی سپلائی روک دی ہے۔ آئل ٹینکرز مالکان کا کہنا ہے کہ پورے ملک میں ان سے ایک جیسا ٹیکس لیا جاتا ہے جب کہ کرک میں ضلعی انتظامیہ اور بانڈہ داؤد شاہ تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن الگ سے ٹیکس کے نام پر چھ چھ ہزار روپے مانگ رہے ہیں جو کہ غیر قانونی ہے۔ نوشاپ آئل فیلڈ کے سامنے سینکڑوں کی تعداد میں آئل ٹینکرز کھڑے ہیں اور یہاں سے سندھ اور اٹک تک آئل ریفائننگ کی سپلایئ منقطع کی ہے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button