خیبر پختونخوا

سیدو شریف ہسپتال کی نئی عمارت تاحال ویران

سوات کے عوام نے مطالبہ کیا ہے کہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کو نو تعمیر بلڈنگ کو منتقل کیا جائے بارہ بیڈ اس ہسپتال میں پانچ سو مریضوں کے لئے دو سال قبل نئی عمارت تعمیر کرائی ہے جس پر ڈیڑھ ارب روپے لاگت آئی ہے لیکن انتظامیہ نے تاحال نئی عمارت میں کام شروع نہیں کیا ۔
ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال سیدوشریف کے سربراہ ڈاکٹر تاج محمد خان نے ٹی این این سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ آبادی میں اضافہ ہونے کی وجہ سے موجودہ عمارت کم پڑ گئی ہے جس کی وجہ سے مریضوں اور عملے کو مشکلات کا سامنا ہے۔ ہسپتال میں تقریباً 70لاکھ مریضو ں کو طبی سہولیات فراہم کی جارہی ہے ، مریضوں کی تعداد زیادہ ہے یہی وجہ ہے کہ ایک بیڈ پر تین سے چار مریض پڑے رہتے ہیں ۔
ہسپتال میں نوتعمیر عمارت کے ٹھیکیدار انجینئر عمر فاروق کا کہناہے کہ ہسپتال میں تعمیراتی کام مکمل ہوچکا ہے لیکن بجلی اور ٹیکنکل کام تاحال مکمل نہیں ہوسکا کیونکہ موجودہ ٹھیکیدار کام مکمل نہیں کرسکتے اور کم بجٹ کی وجہ سے باہر سے ٹھیکیدار نہیں آرہا۔ سابق رکن صوبائی اسمبلی محمد امین نے اس حوالے سے بتایاکہ اس عمارت کی تکمیل کی ڈیڈلائن 2012ءتھی لیکن موجودہ صوبائی حکومت کی نااہلی کے باعث مذکورہ عمارت میں تاحال کام مکمل نہیں ہوسکا۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button