خیبر پختونخوا

پختونخواحکومت کا پشاور میں رینجرز کی تعیناتی کا مطالبہ

 خیبر پختونخوا کی حکومت نے بھتہ خوری سے نمٹنے کیلئے پشاور میں رینجرز کی تعیناتی کا مطالبہ کیا ہے۔ وزیر اعلی پرویز خٹک نے پیر کو ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ انہوں نے شہر کی سیکیورٹی کی خاطر رینجرز فراہم کرنے کیلئے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کوخط لکھا تھا۔

خط میں وفاقی حکومت پرزور دیا گیا کہ بھتہ خوری کے خطرے سے نمٹنے کیلئے ایک ہزار اہلکاروں پر مشتمل خصوصی فورس قائم کرنے کی خاطر کے پی پولیس کو فنڈز دیے جائیں۔

’قومی ایکشن پلان پر عمل درآمد اور آپریشن ضرب عضب کے بعد صورتحال میں قابل ذکر بہتری آئی ہے، لیکن بھتہ خوری کا مسئلہ دوبارہ کھڑا ہو گیا ہے اور سرحد پار سے ایک بڑا گروپ اس میں ملوث ہے‘۔انہوں نے ضلع مردان اور چارسدہ میں اچانک دہشت گردی کے واقعات سامنے آنے پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے شبقدر کو انتہائی ’خطرناک جگہ‘ قرار دیا۔

فوج، پیرا ملٹری فورسز پہلے ہی پشاور کے نواح ، موٹر وے اور انڈس ہائی وے میں تعینات ہیں۔ اس کے علاوہ ایف سی اور فوج پشاور سے ملحقہ قبائلی علاقوں میں مشترکہ آپریشنز میں مصروف ہیں۔ اس وقت رینجرز مشرقی سرحد کے ساتھ ساتھ پنجاب اور سندھ میں تعینات ہیں جبکہ ایف سی مغربی سرحد کی نگرانی کر رہی ہے۔

پرویز خٹک نے ایف سی اہلکاروں کے بجائے پشاور میں رینجرز کی تعیناتی کا مطالبہ کیا ہے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button