خیبر پختونخوا

پشاور پریس کلب میں امیرحمزہ شنواری کی یاد میں سیمینار و مشاعرے کا اہتمام

پشاور پریس کلب میں امیرحمزہ خان شنواری کی یاد میں سیمینار اور مشاعرے کا انعقاد کیا گیا ۔ ہفتے کی شام ہونے والے اس تقریب میں پروفیسر ڈاکٹر یار محمد مغموم، ڈاکٹر اسیر مینگل اور اباسین یوسفزئی سمیت خیبرپختونخوا کے دیگر شعرا ، ادیبوں اور مختلف متبہ فکر کے لوگوں نے شرکت کی۔ اس تقریب کی صدار حمزہ بابا کے جانشین سید طاہر بخاری کر رہے تھے۔ اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مبصرین کا کہنا تھا کہ حمزہ بابا نے پختون قوم اور ادب کے لئے ہمیشہ یاد رہنی والی خدمات سرانجام دی ہیں۔ ان کے مطابق حمزہ بابا کو بابائے غزل اسی لیے کہا جاتا ہے کہ انہوں نے پشتو غزل کو ایک نیا رنگ دیا ہے اور اسے جدید خطوط پر استوار کیا۔

اس سے قبلفروری کے مہینے میں حمزہ بابا کی بائیسویں برسی بھی منائی گئی ہے

اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ حمزہ بابا کی شاعری میں تصوف کے آثار بھی ملتے ہیں اور یہی وجہ سے کہ ان کا شمار صوفی شعرا میں بھی کیا جاتا ہے جس کا ثبوت پختون سماج میں ان کے ہزاروں مریدوں کی موجودگی ہے۔ ٹی این این سے بات کرتے وہئے ڈاکٹر یارمحمد مغموم نے حمزہ بابا کی خدمات کو سراہا اور ان کی کاؤشوں کو نئے دور کے شاعروں کے لئے مشعل راہ گردانا۔ ڈاکٹریار محمد کے مطابق حمزہ بابا نے پشتو ادب کو جدت کے نئے انداز میں رنگ کر دیگر زبانوں کے تقابلی صف میں کھڑا کردیا۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button