خیبر پختونخوا

وزیراعلیٰ نے نقل کی روک تھام کی ہدایات جاری کردیں

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے میٹرک کے سالانہ امتحانات 2016کے دوران تمام امتحانی مراکز پر سکیورٹی کو یقینی بنانے اور شفاف امتحانات کے انعقاد کےلئے انتظامات کو حتمی شکل دینے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے بوٹی مافیا سے نمٹنے کےلئے ذمہ داریوں کا تعین کرنے اور اس سلسلے میں مربوط لائحہ عمل طے کرنے کا حکم دیتے ہوئے نقل میں ملوث عناصر کے خلاف قانونی کاروائی کو ناگزیر قرار دیا۔
وہ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ اس موقع پر میٹرک کے سالانہ امتحانات 2016کےلئے سکیورٹی انتظامات اور نقل کے خلاف اقدامات سے متعلق لائحہ عمل کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ خیبر پختونخوا کے آٹھ تعلیمی بورڈز کے تحت صوبہ بھر میں 2307امتحانی مراکز قائم کئے گئے ہیں جبکہ تقریباً آٹھ لاکھ طلباءوطالبات امتحانات میں شرکت کریں گے۔ وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے موقع پر موجود متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ امتحانی مراکز پر سیکورٹی کے انتظامات کو یقینی بنانے کےلئے ریجنل پولیس افسران، ضلعی پولیس افسران اور تعلیمی بورڈز کے چیئرمین کی باہمی مشاورت سے فوری طور پر لائحہ عمل کو حتمی شکل دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ بوٹی مافیا سے نمٹنے کےلئے تحصیل کی سطح پر کمیٹیاں تشکیل دی جائیں اور امتحانی مراکز کی کڑی نگرانی کی جائے۔ وزیراعلیٰ نے محکمہ تعلیم میں بے لگام تبادلوں کے خاتمے اور نتائج کی بنیاد پر پروموشن کے سلسلے میں ٹھوس اقدامات کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے کہا کہ غریب عوام کے بچوں سے ظلم نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اب میرٹ کی بنیاد پر بھرتیاں ہوں گی اور نتائج کی بنیاد پر پروموشن ملے گی تاکہ صوبے میں سرکاری تعلیمی اداروں کا معیار بلند کیا جا سکے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button