خیبر پختونخوا

چترال کے متاثرین سیلاب اب بھی امداد کے منتظر، حکومتی کاروائی سست روی کا شکار

چترال کے سیلاب سے متاثرہ علاقے چرون کے مکینوں نے حکومتی امداد کی تاحال عدم فراہمی پر حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔ اس مظاہرے کے دوران بونی جانے والی سڑک دس گھنٹے تک بند رہی۔ کوشت، چرون، کورغ، بونی اور ریشن علاقوں کے ان متاثرین کا کہنا تھا کہ سروے مکمل ہونے کے باوجود بھی ابھی تک ان کو امدادی رقم نہیں ملی اور یہ کہ پچھلے سال سیلاب کی نظر ہونے والا پانی کی فراہمی کا بمباغ سکیم ابھی تک ناکارہ پڑا ہے جس کی وجہ سے فصلوں کو پانی نہیں ملتا اور ان کے باغات بنجر ہوگئے ہیں۔

مظاہرین نے سیلاب کی میں بہہ جانے والے چرون۔مستوج پل کی دوبارہ تعمیر و بحالی کا بھی مطالبہ کیا۔ تمام دن احتجاج کرنے کے بعد علاقے کے مکین انتظامیہ کے ساتھ کامیاب مذاکرات کے بعد منتشر ہوگئے ہیں۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button