خیبر پختونخوا

ٹیچنگ اسسٹنٹ سوسائٹی کا پشاور پریس کلب کے سامنے دھرنا

پشاور( ٹی این این )ٹیچنگ اسسٹنٹ سوسائٹی خیبر پختونخوا نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کنٹریکٹ پر بھرتی کئے گئے 850 ٹیچنگ اسسٹنٹس کو مستقل کرکے بنیادی سروس سٹرکچر اورشیڈول چھٹیوں کی تنخواہیں جاری کئے جائےں ۔گزشتہ روز خیبر پختونخوا کے مختلف کالجز میں بھرتی ہونےوالے ٹیچنگ اسسٹنٹس کی جانب سے کلاسوں کا بائیکاٹ کرکے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا . جس کی قیادت سوسائٹی کے چیئرمین ناصر جلیل سعادت اور چیئرپرسن توسین کررہی تھیں۔
انکا کہنا تھا کہ اگست 2014ءکو ایٹا کے ذریعے 9000 3 امیدواروں نے امتحان دیا جس میں 850 افراد کو منتخب کرکے بھرتی کیا گیا تاہم اب ان ملازمین پر غیرامتیازی قانون نافذ کیا گیا ہے جن کو نہ شیڈول چھٹیوں کی تنخوا دی جارہی ہے اورنہ ہی کو ئی سروس سٹرکچر کا نظام وضع کیا گیا ہے ۔انکا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت کی جانب سے میرٹ کی بنیاد پر ان افراد کو بھرتی کیا گیا ہے تو اب ان کے ساتھ ناانصافی ہورہی ہے اور ان کیلئے کوئی قانون نہیں بنایا گیا جبکہ 20 مئی 2015 کوصوبائی وزیر برائے ہائیر ایجوکیشن مشتاق غنی کی جانب سے ان ٹیچنگ اسسٹنٹس کو لیکچررز کی حیثیت سے مستقل کرنے کا اعلان کیا گیا تھا جس پر تاحال کوئی عملدرآمد نہیں ہوسکا ۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button