بین الاقوامی

افغان صدر کی ایک مرتبہ پھر مسلح گروپوں کو مذاکرات کی دعوت

افغان صدر اشرف غنی نے ایک بار پھر طالبان اور دیگر باغی گروپوں کو امن عمل میں شامل ہونے کی دعوت دیتے ہوئے کہا ہے کہ افغان قوم نے پہلے ہی آزادی کی بھاری قیمت چکائی ہے اس لئے طالبان سمیت تمام باغی گروپ جنگ کا راستہ ترک کرکے امن عمل میں شامل ہو جائیں اور ملک کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کریں۔ انکے بقول حکومت امن کی خواہش رکھنے والے کسی بھی گروپ کا خیر مقدم کرے گی۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ افغانستان، پاکستان، امریکہ اور چین کے وزرائے خارجہ کا اجلاس ہوا تھا جس میں مارچ کے وسط میں اسلام آباد میں افغان حکومت اور طالبان کے درمیان براہ راست مذاکرات کی ڈیڈ لائن دی گئی تھی ۔ جس کے بعد پاکستان میں افغانستان کے سفیر نے یہ بھی کہا تھا کہ ان مذاکرات میں کوئی تیسری پارٹی نہیں ہوگی جبکہ ایک دن قبل طالبان کی جانب سے ان مذاکرات میں بیٹھنے سے انکار سامنے آیا ہے جس کی وجہ انہوں نے افغانستان میں بیرونی افواج کی موجودگی بتائی ہے۔ طالبان کے مطابق بیرونی افواج کی موجودگی میں مذاکرات کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button