بین الاقوامی

قیام امن کےلئے مذاکرات میں طالبان کے تمام گروہ مدعو

پاکستان نے افغانستان میں قیام امن کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات میں طالبان کے تمام گروہوں کو مدعو کیے جانے کی تصدیق کردی ہے۔

اسلام آباد میں ہفتہ وار میڈیا بریفنگ کے دوران دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس زکریا کا کہنا تھا کہ امن مذاکرات میں تمام طالبان گروپوں کو دعوت دی گئی ہے اور چار ملکی رابطہ گروپ کے تمام اراکین افغان امن عمل کو آگے بڑھانے کے لیے پرعزم ہیں۔

نفیس زکریا نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کا اعتراف پوری دنیا نے کیا ہے اور دہشت گردی ناصرف پاکستان اور اس خطے بلکہ پوری دنیا کا مسئلہ ہے۔

واضح رہے حالیہ دنوں میں مفاہمتی عمل تیز کرنے کے حوالے سے امریکا، پاکستان، چین اور افغانستان پر مشتمل 4 فریقی تعاون گروپ (کیو سی جی) کے اجلاس کے بعد جاری بیان میں افغان حکومت، طالبان اور دوسرے عسکریت پسندوں کے درمیان براہ راست مذاکرات کی بھرپور حمایت ظاہر کی گئی تھی۔

افغان وزارت خارجہ نے بتایا تھا کہ براہ راست مذاکرات کا ابتدائی دور مارچ کے پہلے ہفتے میں اسلام آباد میں متوقع ہے، ان مذاکرات کو تیزی سے آگے بڑھانے کی غرض سے آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے قطر کی قیادت سے ملاقاتوں میں افغان حکومت اور طالبان کے درمیان امن مذاکرات کی بحالی کے لیے حمایت حاصل کرنے کی کوشش کی تھی جبکہ وزیراعظم نواز شریف نے کہا تھا کہ افغان حکومت اور طالبان کا بات چیت کا فیصلہ امن کے لیے مثبت عمل ہے۔

خیال رہے کہ قطر میں طالبان کا ایک سیاسی دفتر بھی متحرک ہے۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button