بین الاقوامی

پاکستان، افغانستان کا ایکدوسرے کے خلاف اپنی سرزمین استعمال نہ کرنے کا فیصلہ 

پاکستان اور افغانستان نے سرحد پر عسکریت پسندوں کے دخول و خروج کو روکھنے اور ایک دوسرے کے خلاف اپنی سرزمین استعمال نہ کرنے کا مشترکہ فیصلہ کیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق اتوار کو جنرل راحیل شریف کی افغان صدر اشرف غنی اور چیف ایگزیکٹیو عبداللہ عبداللہ سے ہونے والے ملاقات میں دونوں ممالک اس بات پر متفق ہوگئے ہیں کہ مشترکہ مفادات کے حصول کے لئے مل کر کام کرینگے اور ایکدوسرے کا ساتھ دینگے۔بیان کے مطابق دونوں ممالک اس بات پر بھی راضی ہوگئے ہیں کہ افغان طالبان کے ان گروہوں سے مذاکرات کرینگے جو افغانستان میں امن عمل کا حصہ بننا چاہتے ہیں اور جو عسکریت پسند تنظیمیں تشدد کی راہ اپنائینگے ان کے خلاف کاروائی کے لئے مشترکہ لائحہ عمل طے کرینگے۔

پاک فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے افغان اعلٰی حکام سے باتیں کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ دہشتگردی کے خاتمے اور اسکا سدباب کرنے کے لئے دونوں ممالک ملکر کام کرینگے اور ایکدوسرے سے خفیہ معلومات کا تبادلہ بھی کیا جائے گا۔پاکستان، چین  اور امریکہ کے درمیان مذاکرات کا پہلا دور نئے سال کے پہلے مہینے میں شروع ہوگا جس میں افغان امن عمل کے لئے ایک نقشہ ترتیب دیا جائے گا جس میں ہر ملک کو اسکی ذمہ داریا ں سونپی جائینگی۔

Show More

متعلقہ پوسٹس

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button